Uncategorized
Comment 1

اس قوم کی حالت کون بدلے گا؟؟؟


انعم شبیر

میں نے کہیں پڑھا تھا کہ طاقت کا سر چشمہ عوام ہے۔ لیکن
بے چاری پاکستانی عوام کو دیکھ کر تو ایسا نہیں لگتا!!!
پچھلے سڑسٹھ سالوں سے ایک ٓزاد ملک کی عوام ہونے کے باوجود ابھی تک غلامی کی زندگی بسر کرنے پر مجبور ہے۔کیوں؟؟؟
کیونکہ وہ اپنے ملک کے تمام سیاسی حکمرانوں کے ہاتھوں کھلونا بنی ہوئی ہے۔ایسا کھلونا جسکی چابی جس طرف بھی گھمائی جائے وہ اسی طرف مڑ جاتا ہے۔جیسے ایک کھلونا احساسات و جذبات سے عاری ہوتا ہےٹھیک ویسے ہی پاکستانی عوام احساسات و جذبات سے عاری ہو چکی ہے۔بلکہ اگر یہ کہا جائے کہ پاکستانی عوام کی مثال اس گدھے جیسی کہ جس پر جتنا مرضی بوجھ لادا جائے وہ چپ چاپ سر جھکائے اپنے مالک کی لاٹھی کے اشارے پہ وزن اٹھائے منزل سے نا ٓشنا چلتا جاتا ہے ۔اور اس گدھے کے مالک کی مثال کوئی اور نہیں بلکہ اس ملک کے اپنے سیاسی حکمران ہیں۔جو عوام کو اپنا زر خرید جانور سمجھ کر اپنے تمام پیدا کردہ مسائل، قرضوں ،مہنگائی ،لوڈشیڈنگ اور،بیروزگاری جیسے مسائل کا بوجھ عوام کے کندھوں پہ ڈالے پاکستان کی دو کمزور پہیوں والی گاڑی چلا رہے ہیں۔اور ان سب مسائل کی ایک اہم وجہ یہ بھی ہے کہ پاکستانی عوام اپنے حقوق سے ٓگاہ نہیں ہے۔وہ نہیں جانتی کہ ان سے لی جانے والی ٹیکسوں کی رقم کہاں اور کیسے استعمال ہو رہی ہے۔پاکستان میں تمام معدنی اور قدرتی ذخائر موجود ہونے کے باوجود ان پر ہزاروں روپے بلوں اور خوردونوش کی اشیا کی بھاری قیمتوں کا بوجھ کیوں ڈالا جا رہا ہے؟
میں یہاں ایک اور وجہ بھی بتاتی چلوں کہ ایک محطاط اندازے کے مطابق پاکستان میں ساڑھے ٓٹھ کروڑ لوگ غیر تعلیم یافتہ ہیں۔تعلیم انسان میں شعور اور سوچنے سمجھنے کی صلاحیت پیدا کرتی ہے اور صحیح اور غلط کا فرق جاننے میں مدد دیتی ہے۔تو پاکستانی حکمران کبھی نہیں چاہیں گے کہ اس ملک کی عوام اپنے حقوق و فرائض سے ٓشنا ہو کر اچھے برے صحیح غلط کا فرق جان کر کل ان کے گریبانوں میں چھپی کرپشن کی کالک کو دیکھ سکے۔ایسے میں عوام کو چاہیے کہ زیادہ نہیں تو کم سے کم خواندگی کی سطح تک تعلیم ضرور حاصل کرے تاکہ اپنے بنیادی ،معاشرتی،معاشی،سیاسی اور قانونی حقوق سے ٓگاہ ہو سکے۔اور اپنے ملک کو ترقی یافتہ ممالک کی صف میں کھڑا کرنے کے قابل ہو سکے۔

This entry was posted in: Uncategorized

by

Vision 21 is Pakistan based non-profit, non- party Socio-Political organisation. We work through research and advocacy for developing and improving Human Capital, by focusing on Poverty and Misery Alleviation, Rights Awareness, Human Dignity, Women empowerment and Justice as a right and obligation. We act to promote and actively seek Human well-being and happiness by working side by side with the deprived and have-nots.

1 Comment

  1. Muhammad Atif Hayat says

    I have read the article and i do agree on it. But you have blamed the masses for everything. There is no second thought that people are to be convicted of all of these things happening around but at the same time you must go through the reasons which led to it. As a nation, there are certain duties and obligations which has to be known and respectively fulfilled. There is neither the awareness nor is the willingness to change anything. Lets not forget the aspect of critical thinking. Its a chain of conspiracies going on and we all are the part of it. Hence, its a long discussion. Just to summarize with, these things will continue to happen because there is no loyalty, sincerity, awareness, willingness to straighten things and most importantly the education. The reason why education is critically important is that we must realize that we all are accountable to God for the deeds that we do in this world. Its not just the worldly education that is elementary but the religious aspects has to be pondered upon. There is a desperate need to bring a change but it cant be done by being a part of the conspiracies. And let this be crystal clear that the elite power element is the source behind all of it. Its all useless. Its unfortunate but it is so..God bless the nation. They never want to change themselves.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s