Uncategorized
Leave a Comment

خوشی ہوتی ہے۔


اللہ تعالی سب کو خالدہ جیسا بیٹا دے ما شاء اللہ بہت ہی اچھا اور فرماں بردار بچہ ہے۔ہمیشہ اپنی نطریں جھکائیں رکھتا ہے۔چھوٹے بڑے کی تمیز تو جیسے اس نے بچپن میں ہی سیکھ لی تھی پاس کھڑی خالدہ جیسے پھولے نہ سما ئےرہی ہو۔دل ہی دل میں غرور اور خوشی کا ایسا مل جُلا تاثر اُس کے چہرے پر نمودار ہوا جیسے ہواوں میں اُڑ رہی ہو۔گھر کی دہلیز پر قدم رکھتےہی بڑی بڑی سانسیں لیتے ہوئے اپنے میاں کی طرف مخاطب ہوتے ہوئےفورا آواز کا رُخ میاں کی طرف اورچہرے کا رُخ بیٹے کی طرف کیے ہوئےکبھی بیٹے کی پیشانی چومے تو کبھی بیٹے کوگلے سے لگاتے ہوئے بولی ایک یہ تمھارے ابو ہیں جو ہر وقت تمھاری بُرائی کرنے کا تو جیسے ٹھیکہ لیا ہو۔میری دوست کےمحلے میں جس نے میرے لعل کو دیکھا وہ تعریف کیے بغیر نہ رہ سکا کچھ عورتوں کو تو جیسے غش پڑ گیا ہو۔خالدہ کی بات کاٹتے ہوئے جھٹ سے میاں صاحب بولےخالدہ بیگم بہت خوب بہت خوب یہ جو آپ نے منہ پھیر کر تقریر کی ہےنا اس کے ساتھ میں آپ کی اطلاع کے لیے عرض کر دیتا ہوں کہ مہربانی فرما کر اپنی دوست کے محلے والوں کو یہ بھی بتا دیں آپ کے بیٹے نے کتابیں چھوڑ کر نشہ کرنا شروع کیا ہوا ہےچوری کرتا ہے محلے میں چھوٹے چھوٹے بچوں سے پیسے لے کر بھاگ جاتا ہےوالدین کے گلے میں ہاتھ ڈالتا ہے۔بہن بھائیوں کو مارتا ہےظاہرابھی اپنے لال کا محلے والوں کے سامنے چاک کرتی اور بتاتی اصلیت کیا ہے تمھارے لال کی۔

تمھاری تہذیب اپنے خنجر سے آپ ہی خودکشی کرے گی

جو شاخ نازک پہ آشیانہ بنے گاناپائدار ہوگا

پاکستانی وزیراعظم میاں محمد نوازشریف نےڈیوس میں مختلف سربراہان سے ملاقات کر کےوطن واپس لوٹے تو بڑی خوشی ہوتی ہے خود کی تعریف یعنی پاکستان کی تعریف کوئی دوسرا بندہ یعنی دوسرا ملک کرے تو خوشی ہوتی ہے انھوں نے کہا آپ اور آپ کی حکومت پاکستان کو دُرست سمت پر لے کر جا رہی ہے چارسدہ میں آنے والے مستقبل کو خون سے نہلایا گیا چھانگا مانگا میں ٹرین حادثے میں 18 افراد ا پنی جان کی بازی ہار گےشاید دنیا یہ واحد ملک ہے جہاں ڈرائیور کو دیکھے بغیر فٹ کا لائنس دے دیا جاتا ہےپولیس عوام کی خدمت کی بجائے نوجوانوں پر اندھا دھند فائرنگ کرکے مستقبل کو داغدار بنا رہی ہے لاہور میں میاں صاحب اورنج ٹرین کا منصوبہ ثقافتی ورثے کو چیرتے ہوئے بنا رہے ہیں صرف اس لیے کیونکہ اُن کا گھر اس منصوبے کے کافی نزدیک ہےخالدہ کی طرح میاں صاحب بھی بہت خوش ہو رہے ہیں لیکن اصل کہانی خالدہ کے شوہر کی طرح پاکستانی عوام جانتی ہےکہ ہم کتنے پانی میں ہیں۔دوسرے ممالک نے ٹھیک ہی کہا ہے مُنا بھائی لگے رہو۔

 

 

 

 

This entry was posted in: Uncategorized

by

Vision 21 is Pakistan based non-profit, non- party Socio-Political organisation. We work through research and advocacy for developing and improving Human Capital, by focusing on Poverty and Misery Alleviation, Rights Awareness, Human Dignity, Women empowerment and Justice as a right and obligation. We act to promote and actively seek Human well-being and happiness by working side by side with the deprived and have-nots.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s