Pakistan, Political Parties, Uncategorized
Leave a Comment

خواب۔۔۔۔یا مذاق


کون ناراض ہو رہا ہے کون راضی ہو رہا ہے ۔تاریخ گواہ ہے کبھی تاریخ نے کرپشن نہیں کی اگر کرپشن کی ہے تو تاریخ لکھنے والوں نے کی ہے جس نے جیسا کیا تاریخ لکھتی گئی اور نئی نئی تاریخ رقم ہوتی گئ۔گو کہ داستان محبت ہوداستان عشق ہوانسان کے روپ میں درندے ہوں قائداعظم ہوں یا ہلاکوخان ہوں ہٹلر ہوں یا چنگیز خان ہو زرداری ہو یا شر یف خاندان ہو سیاسی بادشاہت کا راج ہویا ا یسانظام ہو جو صرف امیروں کے لیے ہو یا عوام کا خون چوسنے کا نیا نیا ڈھنگ ہو یا نہ ختم ہونے والے ظلم کی  لمبی داستا ن  ہو تاریخ اپنی جگہ بناتی جاتی ہے اور نئی داستان اپنے گودام میں محفوظ کرتی جاتی ہے۔ پاکستانی میں اور میرے ملک کے نام نہاد سیاست دانوں کا  المیہ یہ ہے کہ ہم تاریخ کو اپنے نام کے ساتھ بہت سنہرے الفاظ میں لکھنا چاہتے ہیں ۔اور کام بھی وہ کرنا چاہتے ہیں جو ایسے ہوں جو جو تاریخ پڑھے وہ ہمارے کاموں کو یاد رکھےاور ہم رہتی دُنیا تک رول ماڈل بنے رہیں۔لیکن افسوس  صرف خواب دیکھتے ہیں کرتے کچھ  بھی نہیں  ۔بہت زمانے کی بات ہے کہ ایک آدمی گھر گھر  انڈے جا کر بیچا کرتا تھا ۔انڈے وہ عموما بڑے تھال میں ڈال کر سر پر رکھ کر آوازیں لگاتا تھا۔ایک دن انڈے سر پر رکھے ہوئے وہ چلتا جا رہا تھا اور ساتھ ساتھ خواب دیکھے جا رہا تھا کہ میں انڈے بیچ کر بھینس لوںگا ۔اُس کے بعد بھینس کا دودھ خوب بیچوں گا ۔اُس کے بعد شادی کروں گا ۔شادی کے بعد میرے بہت سارے بچے ہوں گے اور بچے بار بار مجھے کہیں گے ابا حضور کھانا کھا لیں میں کہوں گا نہیں کھاتا نہیں کھاتا ابھی وہ سر ہلا رہا تھا کہ سر سے تھال گرا اور سب انڈے ٹوٹ گئے۔ دراصل یہ تھال میں انڈے ہم عوام ہیں جن کو   میاں صاحب اور اُن کے حواری ایک تھال میں ڈالے اُس وقت سر پر لیے پھرتے ہیں جب وزیراعظم صاحب پانامالیکس جیسے مسئلے میں پھنسے ہوں یا الیکشن سے پہلے اقتدار کی کرسی کے لیے ووٹ چاہیں ہوں ۔انڈے بیچنے والے کی طرح ہم عوام کو وزیراعظم نے بہت سارے خوابوں کی داستان سُنائی اور ہم بغیر سوچے سمجھے جزباتی ہو کر مر مرانے کے لیے تیار ہو جاتے ہیں ۔اور اقتدار کے پُجاری ہمیں انڈے کی طرح رُوند دیتے ہیں۔پھر تاریخ بن جاتی ہے اور تاریخ جو لکھتی ہے سچ لکھتی ہے ۔یہ نہیں لکھتی کون کتنا معصوم تھا ۔کس سے انجانے میں غلطی ہو گئی ہے۔

This entry was posted in: Pakistan, Political Parties, Uncategorized

by

Vision 21 is Pakistan based non-profit, non- party Socio-Political organisation. We work through research and advocacy for developing and improving Human Capital, by focusing on Poverty and Misery Alleviation, Rights Awareness, Human Dignity, Women empowerment and Justice as a right and obligation. We act to promote and actively seek Human well-being and happiness by working side by side with the deprived and have-nots.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s