Uncategorized
Leave a Comment

ٹیکس کلچر کا فقدان کیوں؟


عام انتخابات 2018ء کے لئے کاغذات نامزدگی داخل کرانے والے 60فیصد سے زائد امیدواروں کے ٹیکس نیٹ سے باہر رہنے یا ان کی جانب سے گوشوارے جمع کرانے میں اجتناب کی جو بھی وجوہ ہوں، ان پر سماجی و نفسیاتی علوم کے ماہرین کو سنجیدگی سے غور کرنا چاہئے اور ایسا حل تجویز کرنا چاہئے کہ جو لوگ قوم کی قسمت کے فیصلے کرنے کیلئے خود کو بطور امیدوار پیش کریں ان میں کاغذات نامزدگی کیساتھ پیش کی جانے والی تفصیلات کی فراہمی جیسے امور پر زیادہ توجہ دینے کا رجحان نظر آئے۔ ایف بی آر ذرائع کے مطابق 25؍جولائی 2018ء کے انتخابات کیلئے جن 21428 امیدواروں نے کاغذات نامزدگی جمع کرائے ان میں سے 30فیصد کے پاس نیشنل ٹیکس نمبر (این ٹی این) نہیں ہے۔ انہوں نے ٹیکس گوشوارے بھی نہیں جمع کرائے جبکہ قانونی طور پر گوشوارے جمع نہ کرانے والا نادہند سمجھا جاتا ہے۔ اس باب میں ایک نظریہ یہ ہے کہ کئی امیدواروں کے پاس اثاثے ہیں ہی نہیں۔ ماضی میں ایک آدھ ایسا واقعہ بھی دیکھنے میں آیا کہ قومی یا صوبائی اسمبلی کا الیکشن لڑنے والا فرد واقعی کسی قسم کی جائیداد کا مالک نہیں تھا مگر اپنے ذاتی کرداراور خدمات کی بنیادپرووٹروں سے پذیرائی حاصل کرنے میں کامیاب رہا ۔ یہ بات بھی ریکارڈ پر ہے کہ عبدالستار ایدھی جیسا سماجی کارکن، حبیب جالب جیسا مقبول عوامی امنگوں کا

ترجمان شاعر اور پوری زندگی مزدوروں کی خدمت میں بسر کرنے والا مرزا ابراہیم انتخابات میں سرمایہ کی دوڑ کے باعث اسمبلیوں میں نہ پہنچ سکا۔ یہ بات بعیداز امکان نظر آتی ہے کہ ان سب حقائق کو جاننے والا کوئی فرد انتخابات 2018ء میں امیدوار بننے کا ارادہ کرلے اور اس بات کو نظرانداز کردے کہ اب شناختی کارڈ نمبر کو بطور این ٹی این استعمال کیا جاسکتا ہے اور ایسے امیدوار پر بھی یہ ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ اپنے گوشواروں میں جائیدادیں وغیرہ نہ ہونے کی صراحت کرے۔ گزشتہ انتخابات میں بھی صورتحال کچھ مختلف نہیں تھی۔ بتایا جاتا ہے کہ 2013ء کے عام انتخابات میں 50فیصد امیدواروں کے پاس این ٹی این نمبر نہیں تھے۔ باقی 50فیصد این ٹی این کے حامل امیدواروں میں سے صرف 11فیصد نے گوشوارے داخل کئے۔ مذکورہ انتخابات میں منتخب ہونے والے ارکان قومی و صوبائی اسمبلی میں ایک قابل لحاظ تعداد اگرچہ ہر سال قواعد کے مطابق اپنے اثاثوں کے گوشوارے جمع کراتی رہی لیکن یہ بھی حقیقت ہے کہ ایک بڑی تعدادکی طرف سے الیکشن کمیشن کی یاد دہانیوں کے باوجود اس باب میں تساہل سے کام لیا جاتا رہا۔ 2013ء میں منتخب ہونیوالی پارلیمان میں ایک رکن نے ارکان پارلیمان کے ٹیکس آڈٹ کے بارے میں ایک کوشش کی جسے نہ صرف ناکام بنا دیا گیا بلکہ 2017ء میں تمام پارلیمانی جماعتیں کاغذات نامزدگی کیساتھ درکار ٹیکس تفصیلات سے متعلق شق انتخابی ایکٹ سے خارج کرانے کیلئے ہم آواز ہو گئیں۔ کاغذات نامزدگی ترتیب دینے کا جو اختیار الیکشن کمیشن کو دیا گیا تھا اُس میں تین سالہ ٹیکس تفصیلات کے علاوہ نادہندگی، شہریت، زیر التواء مقدمات، تفتیش سمیت 18ڈیکلیئریشن مانگے گئے تھے۔ تمام پارلیمانی جماعتوں نے الیکشن کمیشن کو تفویض کردہ مذکورہ اختیار ختم کر دیا۔ بعدازاں معاملہ اس وقت الٹ ہوگیا جب سپریم کورٹ نے الیکشن کمیشن کو ہدایت کی کہ وہ امیدواروں سے اس بارے میں علیحدہ بیانِ حلفی لیں۔ اب جبکہ تمام امیدوار بیان حلفی کے ذریعے اپنے تمام کوائف جمع کرانے کے پابند ہیں یہ ضرورت بڑھ گئی ہے کہ اس وقت کے انتخابی امیدوار اور بعدازاں منتخب ہونے والے پارلیمانی ارکان ٹیکسوں کی درست اور بروقت ادائیگی کا اہتمام کریں۔ اس طرح عام لوگوں میں بھی ٹیکس ادا کرنے کا رجحان بڑھے گا۔ ملک کو اس وقت جن معاشی مسائل کا سامنا ہے، اُن کا تقاضا ہے کہ ٹیکسوں کی ادائیگی کا کام قومی فریضہ سمجھ کر کیا جائے۔ دوسری جانب ایف بی آر سمیت ٹیکس جمع کرنے والی مشینری کو نہ صرف زیادہ فعال بنایا جانا چاہئے بلکہ اس بات کو بھی یقینی بنانے کی ضرورت ہے کہ متعلقہ اہلکار امانت و دیانت کے معیارات پر پورے اتریں۔

This entry was posted in: Uncategorized

by

Vision 21 is Pakistan based non-profit, non- party Socio-Political organisation. We work through research and advocacy for developing and improving Human Capital, by focusing on Poverty and Misery Alleviation, Rights Awareness, Human Dignity, Women empowerment and Justice as a right and obligation. We act to promote and actively seek Human well-being and happiness by working side by side with the deprived and have-nots.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s